38

وزیر صحت نے مردان میڈیکل کمپلکس کے ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت سے نو مولود بچی کی ہلاکت کے واقعے کا سخت نوٹس لے لیا


مردان: واقعے کی غیر جانبدارانہ انکوائری فوری مکمل کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت، واقعے کے ذمہ داروں کے خلاف سخت سے سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی، غفلت کے مرتکب عملے کے ساتھ کوئی رعایت نہیں برتی جاۓ گی، شہرام تراکیء
خیبرپختونخوا کے سنیئر وزیر برائے صحت شہرام تراکیء نے مردان میڈیکل کمپلکس میں ڈاکٹروں اور دیگر عملے کی مبینہ غفلت سے نو مولود بچی کی ہلاکت کے واقعے کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ہسپتال انتظامیہ کو اس واقعے کی فوری طور پر ایک غیر جانبدارانہ اور تمام پہلوؤں سے تحقیقات کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ گزشتہ روز مذکورہ ہسپتال میں رونما ہونے والے افسوسناک واقعے سے متعلق ذرائع ابلاغ میں خبر نشر ہوتے ہی صوبائی وزیر نے ہسپتال انتظامیہ سے رابطہ کرکے اس واقعے کی فوری تحقیقات کے لیے ایک غیر جانبدار انکوائری کمیٹی تشکیل دینے اور کم سے کم ممکنہ وقت میں انکوائری رپورٹ پیش کرنے کے احکامات جاری کیے۔
اس واقعے پر انتہائی افسوس کا اظہار اور متاثرہ خاندان سے دلی ہمدردی کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انکوائری کے نتائج سامنے آنے پر اس واقعے میں فرائض سے عفلت اور کوتاہی کے مرتکب عملے کے خلاف سے سخت انضباطی کاروائی عمل میں لائی جائے گی اور کسی کے ساتھ بھی کوئی رعایت نہیں برتی جاۓ گی۔ انہوں نے واضح کیا کہ صوبائی حکومت سرکاری ہسپتالوں میں ہر قسم کی طبی سہولیات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ ڈاکٹروں اور دیگر عملے کو مالی مراعات دینے پر کثیر رقم خرچ کررہی ہے تاکہ عوام کو علاج معالجے کی معیاری سہولیات ہمہ وقت دستیاب ہوں اور ان ہسپتالوں میں طبی خدمات کی فراہمی بہتر ہو مگر ان سب کے باوجود کسی سرکاری ہسپتال میں ایسے واقعات کا پیش آنا انتہائی افسوسناک اور ناقابل برداشت ہے اور حکومت ایسے واقعات کے ذمہ داروں ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹ لے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں